Facebook Facebook Facebook Facebook

Categories

سندھ اسمبلی:اقلیتوں کی حفاظت کافوجداری قانون منظور

Posted by
Published: November 24, 2016 05:06 pm

اسلام آباد ، 24نومبر 2016 : سندھ  کی صوبائی اسمبلی کے  28 ویں اجلاس کی ساتویں نشست میں ایوان نے  ضمنی ایجنڈے کے طور پر اقلیتوں کی حفاظت کے فوجداری قانون (ترمیمی)  بل2015 کی منظوری دی جبکہ تین سرکاری قانونی مسودات متعارف بھی کرائے گئے ۔

قرارداد منظور ایوان کی کارروائی کے خاص نکات

  • نشست کا دورانیہ02 گھنٹے02منٹ رہا ۔
  • نشست مقررہ وقت دس بجے صبح کی بجائے  11 بجے شروع ہوئی ۔
  • تین منٹ کیلئے وقفہ نماز ہوا ۔
  • سپیکر نےمکمل نشست کی صدارت کی ،ڈپٹی سپیکر بھی موجود تھیں ۔
  • قائد ایوان 17منٹ کیلئے شریک ہوئے،قائد حزب اختلاف موجود نہ تھے ۔
  • نشست کےآغاز پر 47( 28فیصد ) جبکہ اختتام پر 65(39فیصد) اراکین کی موجودگی مشاہدہ کی گئی ۔
  • مسلم لیگ (فنکشنل) ، متحدہ قومی موومنٹ، پیپلز پارٹی  اور پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمانی قائدین نے شرکت کی ۔
  • پانچ اقلیتی رکن شریک ہوئے ۔
  • تیرہ اراکین نے رخصت کی درخواستیں ارسال کیں ۔

کارکردگی

  • ایوان نے اقلیتوں کے تحفظ کے فوجداری قانون بل 2015 کی منظوری دی
  • رضاکارانہ سماجی بہبود ادارے ( اندراج و کنٹرول ) سندھ (ترمیمی) بل ، سندھ ورکرز ویلفیئر فنڈ ( ترمیمی) بل2016 اور سندھ ایمپلائیز سوشل سیکیورٹی  (ترمیمی) بل 2016 ایوان میں متعارف کرائے گئے جنہیں متعلقہ مجالس ہائے قائمہ کے سپرد کر دیا گیا ۔

نمائندگی و جوابدہی

  • نظام ہائے کار پر موجود پانچ نشانذدہ سوالات اٹھائے گئے ، متعلقہ وزرا نے جوابات دیئے ۔ اراکین نے چھبیس ضمنی سوالات بھی دریافت کئے ۔
  • سپیکر نے صوبے مین گھوسٹ ہسپتالوں اور صحت کی سہولیات سے متعلق تحریک انصاف کے ایک رکن کی پیش کی گئی تحریک کو مسترد کردیا۔
  • ایوان نےعوامی اہمیت کے مختلف مسائل پر پیش پانچ توجہ دلاؤ نوٹس اٹھائے ۔
  • ایوان نے ڈاکٹر شاہجہان لغاری اور فراز ڈیرو کوسندھ فنی تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت کے ادارے کے بورڈ میں ایوان کی نمائندگی کیلئے منتخب کیا ۔

شفافیت

  • ایجنڈے کی نقول تمام اراکین ، مشاہدہ کاروں اور دیگرکیلئے دستیاب تھیں ۔
  • اراکین کی حاضری کی تفصیل مشاہدہ کاروں  اور عوام کیلئے دستیاب بنائی گئی  ۔

(یہ فیکٹ شیٹ فری اینڈ فئیر الیکشن نیٹ ورک   کی شریک  کار تنظیم پاکستان پریس فاؤنڈیشن   کی جانب  سے سندھ اسمبلی کی کاروائی کے براہ راست مشاہدے پر مبنی ہے۔ ادارہ ممکنہ غلطی  یا کوتاہی پر پیشگی معذرت خواہ ہے۔)

Posted by on November 24, 2016. Filed under سندھ اسمبلی. You can follow any responses to this entry through the RSS 2.0. Both comments and pings are currently closed.